173.82.245.150 United States

06-Jul-2021

انسان کبھی بوڑھا نہیں ہوتا

by admin

(انسان کبھی بوڑھا نہیں ہوتا)
(کالم نگار فراز قریشی)
ﺍﯾﮏ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﯽ ﺷﺎﺩﯼ ﮐﯽ ﻋﻤﺮ ﻧﮑﻞ گئی۔ ﺁﺧﺮ ﺍﯾﮏ ﻟﮍﮐﯽ ﭘﺴﻨﺪ ﺁ گئی ﺗﻮ ﺭﺷﺘﮧ ﭘﺮﭘﻮﺯ ﮐﯿﺎ۔ ﻟﮍﮐﯽ ﺩﻭ ﺷﺮائط پر ﺷﺎﺩﯼ کے لئے ﺗﯿﺎﺭ ہو گئی ﺍﯾﮏ ﯾﮧ ﮐﮧ ہمیشہ ﺟﻮﺍﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﭩﮭﻮ ﮔﮯ ﺩﻭﺳﺮﺍ ﺩﯾﻮﺍﺭ ﭘﮭﻼﻧﮓ ﮐﮯ ﮔﮭﺮ ﺁﯾﺎ ﮐﺮﻭ ﮔﮯ ﺷﺎﺩﯼ ہو گئی، ﺑﺎﺑﺎ ﺟﯽ ﺟﻮﺍﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ہی ﺑﯿﭩﮭﺘﮯ ﺍﻭﺭ ﮔﭙﯿﮟ ﻟﮕﺎﺗﮯ، ﺟﻮﺍﻥ ﻇﺎہر ہے ﻟﮍﮐﯿﻮﮞ ﮐﯽ ﺍﻭﺭ ﭘﯿﺎﺭ ﻣﺤﺒﺖ ﮐﯽ ہی ﺑﺎﺗﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ہیں، ﻣﻨﮉﯾﻮﮞ ﮐﮯ ﺑﮭﺎﺅ ﺳﮯ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﺩﻟﭽﺴﭙﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻧﮧ ہی ﻣﻮﺿﻮﻋﺎﺕ ﺷﺮﯾﻒ ﺳﮯ ﮐﭽھ ﻟﯿﻨﺎ ﺩﯾﻨﺎ، ﺑﺎﺑﺎ ﮐﺎ ﻣﻮﮈ ہر ﻭﻗﺖ ﺭﻭﻣﯿﻨﭩﮏ ﺭہتا ﺍﻭﺭ ﺟﺎﺗﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﯾﮏ ﺟﮭﭩﮑﮯ ﺳﮯ ﺩﯾﻮﺍﺭ ﭘﮭﻼﻧﮓ ﮐﺮ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺩﻢ ﺳﮯ ﮐﻮﺩ ﺟﺎﺗﮯ ﺍﯾﮏ ﺩﻥ ﺑﺎﺑﺎ ﺟﯽ ﮐﮯ ﭘﺮﺍﻧﮯ ﺟﺎﻧﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻣﻞ ﮔﺌﮯ، ﻭﮦ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﮔﻠﮯ ﺷﮑﻮﮮ ﮐﺮ ﮐﮯ ﺍﻭﺭ ﮔﮭﯿﺮ ﮔﮭﺎﺭ ﮐﮯ ﺍپنی ﭘﻨﮉﺍﻝ ﭼﻮﮐﮍﯼ ﻣﯿﮟ ﻟﮯ ﮔﺌﮯ، ﺍﺏ ﻭہاﮞ ﮐﯿﺎ ﺑﺎﺗﯿﮟ ہوﻧﯽ ﺗﮭﯿﮟ؟ ﯾﺎﺭ ﮔﮭﭩﻨﻮﮞ ﮐﮯ ﺩﺭﺩ ﺳﮯ ﻣﺮ ﮔﯿﺎ ہوﮞ ﺑﯿﭩھ ﮐﺮ ﻧﻤﺎﺯ ﭘﮍﮬﺘﺎ ہوﮞ، ﻣﯿﺮﯼ ﺗﻮ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﺟﺎﻥ ﺭﯾﮍﮪ ﮐﯽ ہڈی ﮐﺎ ﻣﮩﺮﮦ ﮐﮭﻞ ﮔﯿﺎ ہے، ﮈﺍﮐﭩﺮ ﮐﮩﺘﺎ ہے ﺟﮭﭩﮑﺎ ﻧﮧ ﻟﮕﮯ، ﯾﺎﺭ ﻣﺠﮭﮯ ﺗﻮ ﻧﻈﺮ ہی ﮐﭽھ ﻧﮩﯿﮟ ﺁﺗﺎ ﮐﻞ ﭘﺎﻧﯽ ﮐﮯ ﺑﺠﺎﺋﮯ ﻣﭩﯽ ﮐﺎ ﺗﯿﻞ ﭘﯽ ﮔﯿﺎ ﺗﮭﺎ، ﮈﺭﭖ ﻟﮕﯽ ہے ﺗﻮ ﺟﺎﻥ ﺑﭽﯽ ہے ۔ﺑﺎﺑﺎ ﺟﻮﮞ ﺟﻮﮞ ﺍﻥ ﮐﯽ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺳﻨﺘﺎ ﮔﯿﺎ ﺗُﻮﮞ ﺗُﻮﮞ ﺍﺱ ﮐﺎ ﻣﻮﺭﺍﻝ ﺯﻣﯿﻦ ﭘﺮ ﻟﮕﺘﺎ ﮔﯿﺎ، ﺟﺐ ﭨﮭﯿﮏ ﭘﺎﺗﺎﻝ ﻣﯿﮟ ﭘﮩﻨﭽﺎ ﺗﻮ ﻣﺠﻠﺲ ﺑﺮﺧﻮﺍﺳﺖ ہو گئی ﺍﻭﺭ ﺑﺎﺑﺎ ﮔﮭﺴﭩﺘﮯ ﭘﺎﺅﮞ ﮐﮯ ﺳﺎﺗھ ﮔﮭﺮ ﮐﻮ ﺭﻭﺍﻧﮧ ہوﺍ !
ﮔﮭﺮ ﭘﮩﻨﭻ ﮐﺮ ﺩﯾﻮﺍﺭ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﺗﻮ ﮔﮭﺮ ﮐﯽ ﺩﯾﻮﺍﺭ ﮐﯽ ﺑﺠﺎﺋﮯ ﻭﮦ ﺩﯾﻮﺍﺭِ ﭼﯿﻦ ﻟﮕﯽ، ہمت ﻧﮧ ﭘﮍﯼ ﺩﯾﻮﺍﺭ ﮐﻮﺩﻧﮯ ﮐﯽ ﮐﮧ ﮐﮩﯿﮟ ﺑﺎﺑﮯ ﭘﮭﺠﮯ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﭼُﮏ ﻧﮧ ﻧﮑﻞ ﺁﺋﮯ ﺁﺧﺮ ﻣﺎﮈﻝ ﺗﻮ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﮐﺎ ﺍﯾﮏ ہی ﺗﮭﺎ،ﺑﺎﺑﺎ ﻧﮯ ﮐُﻨﮉی ﮐﮭﭩﮑﮭﭩﺎئی، ﮐﮭﭧ ﮐﮭﭧ، ﺍﻧﺪﺭ ﺳﮯ ﺑﯿﻮﯼ ﺑﻮﻟﯽ ﺍﺳﯽ لئے ﺑﻮﻻ ﺗﮭﺎ ﺟﻮﺍﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﭩﮭﺎ ﮐﺮ، ﻟﮕﺘﺎ ہے ﺁﺝ ﺑﻮﮌﮬﻮﮞ ﮐﯽ ﻣﺠﻠﺲ ﺍﭨﯿﻨﮉ ﮐﺮ ﻟﯽ ہے، ﺍﺳﯽ ﻟﺌﮯ ہمت ﺟﻮﺍﺏ ﺩﮮ گئی ہے ﻧﺘﯿﺠﮧ ! ﺍﻧﺴﺎﻥ ﺑﻮﮌﮬﺎ ﻧﮩﯿﮟ ہوﺗﺎ ﻣﺠﻠﺲ ﺑﻮﮌﮬﺎ ﮐﺮ ﺩﯾﺘﯽ ہے، ﻣﺎہرﯾﻦ ﻧﻔﺴﯿﺎﺕ ﻟﮑﮭﺘﮯ ہیں ﮐﮧ ﻣﻌﻠﻢ ‏( ﺍنسان ‏) ﺍﺳﯽ ﻟﺌﮯ ﺟﻠﺪﯼ ﺑﻮﮌﮬﮯ ﻧﮩﯿﮟ ہوﺗﮯ ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﻭﮦ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﯽ ﻣﺠﻠﺲ ﻣﯿﮟ ﺭہتے ہیں ﯾﻮﮞ ﻭﮦ ﻣﺎﺣﻮﻝ ﺍﻥ ﭘﺮ ﭨﺎﺋﻢ ﺍﯾﻨﮉ ﺳﭙﯿﺲ ﮐﮯ ﺍﺛﺮﺍﺕ ﮐﻮ ﻧﯿﻮﭨﺮﻝ ﮐﺮ ﺩﯾﺘﺎ ہے ۔

Related Posts

Leave a Comment

Translate »